صفحہ اوّل » کاشف نامہ

جمیعت علمائے اسلام کی صد سالہ تقریبات

مصنف: وقت: اتوار، 15 جنوری 2017کوئی تبصرہ نہیں

فوجی عدالتوں کی مخالفت اور لاپتہ افراد کی بازیابی کیلئے مولانا فضل الرحمان صاحب کا بیان بلاشبہ قابل تحسین ہے لیکن یہ صد سالہ تقریبات کا کیا چکر ہے؟ جمیعت علمائے اسلام کی تاسیس کو 1945 میں رکھی گئی تھی، مولانا کس جماعت کی بات کررہے ہیں؟

کہیں وہ اس جماعت کی بات تو نہیں کررہے جسکی کانگریس نوازی سے عاجز آکر مولانا شبیر احمد عثمانی رح نے جمیعت علمائے اسلام کی بنیاد ڈالی تھی۔ یہ تو ایسا ہے جیسے مسلم لیگ والے کانگریس کی، تنظیم والے جماعت کی اور پاک سرزمین والے متحدہ کا جشن منائیں۔ صاحب وہ جمعیت قوم پرستی، سیکولرازم اور کانگریس نوازی پر کھڑی تھی، مگر جس جمیعت کا آپکو امیر مقرر کیا گیا ہے اسکی بنائے فکر دو قومی نظریہ، تحریک پاکستان اور مسلم لیگ کی حمایت پر مبنی ہے۔

یہ درست ہیکہ آپکے والد برزگوار کانگریسی جمیعت کے رکن تھے اور 1948 تک اسی نظم سے وابستہ رہے۔ لیکن بہرحال حالات کا رخ دیکھتے ہوئے انہوں نے لیگی جمیعت میں شمولیت اختیار کرلی تھی اور بعد میں اسی کے سربراہ مقرر ہوئے۔ سربراہی پاکر جماعت کی فکر اور تاریخ ہی بدل دینا کہاں کا انصاف ہے؟

فیس بک تبصرے

تبصرہ کیجیے




آپ ان ایکس ایچ ٹی ایم ایل ٹیگز کو استعمال کرسکتے ہیں:
<a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>